Yeh Tujhy Kis Khata Ne Roka He

yeh tujhy kis khata ne roka he

yeh tujhy kis khata ne roka he

 

Ye tuje kis khtaa ne roka ha
Hum ko teri ada ne roka ha
Hum bi chalte gunah karne ko
Fikre roze jaza ne roka ha
En taraki pasand logon ka
Rasta kab haya ne roka ha
Is chaman main ye phool ke liye nahin
Mujh ko khaare wafa ne roka ha
Sher se jana tha hamesha ko
phir ye teri sada ne roka ha
Ma kashi se tujhe ae waiz basal
Faqat apni ana ne roka ha
Kab se darne lage khuda se wo
Kab sitam bewfa ne roka ha
Ab ye meri tabie ko Rehan
Meri maan ki dua ne rooka ha

یہ تجھے کس خطا نے روکا ہے
ہم کو تیری ادا نے روکا ہے
ہم بھی چلتے گناہ کرنے کو
فکرِروزِ جزانے روکا ہے
ان ترقی پسند لوگوں کا
راستہ کب حیا نے روکا ہے
اس چمن میں یہ پھول کیلیے نہیں
مجھ کوخارِوفا نے روکا ہے
شہر سے جانا تھا ہمیشہ کو
پھر یہ تیری صدا نے روکا ہے
میکشی سے تجھے اے واعظ بس
فقط اپنی انا نے روکا ہے
کب سے ڈرنے لگے خدا سے وہ
کب ستم بے وفا نے روکا ہے
اب یہ میری تباہی کو ریحان
میری ماں کی دعا نے روکا ہے

Rehan Ahmed Rehan

Leave a Reply

Submit Your Poetry To Us : Submit Here